سٹوڈنٹ ویزا

اس صفحہ پر:


عمومی سوالات

عمومی جائزہ

ریاست ہائے متحدہ امریکہ ان غیر ملکی شہریوں کا خیر مقدم کرتا ہے جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ پڑھنے کے لئے آتے ہیں۔ ویزا کے لئے درخواست دینے سے پہلے، تمام سٹوڈنٹ ویزا درخواست دہندگان سے یہ مطلوب ہے کہ وہ اپنے اسکول یا پروگرام کے ذریعہ مقبول اور منظور شدہ ہوں۔ مقبول ہو جانے کے بعد، تعلیمی مراکز ہر درخواست دہندہ کو ضروری منظوری دستاویزات فراہم کریں گے جنہیں سٹوڈنٹ ویزا کے لئے درخواست دیتے وقت جمع کیا جائے گا۔

ویزا تفصیلات اور معیار اہلیت

F-1 ویزا

یہ طالب علم کی سب سے زيادہ عام قسم ہے۔ اگر آپ ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں اکیڈمی پڑھائیوں میں مشغول رہنا چاہتے ہيں اور آپ ایسےکسی منظور شدہ اسکول، جیسے تسلیم شدہ امریکی کالج یا یونیورسٹی، پرائیوٹ سکنڈری اسکول، یا منظور شدہ انگریزی زبان کے پروگرام میں کرنا چاہتے ہيں، تو آپ کو F-1 ویزا کی ضرورت ہوگی۔ اگر آپ کی پڑھائی کا کورس ایک ہفتہ میں 18 گھنٹے سے زيادہ ہے تو بھی آپ کو F-1 ویزا کی ضرورت ہوگی۔

M-1 ویزا

اگر آپ کسی امریکی انسٹی ٹیوشن میں غیر اکیڈمی یا پیشہ ورانہ پڑھائی یا تربیت میں مشغول ہونے کا منصوبہ بناتے ہیں تو آپ کو M-1 ویزا کی ضرورت ہے۔

ان تمام ویزے اور ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں پڑھائی کرنے کے مواقع کے تعلق سے مزید معلومات ایجوکیشن ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی ویب سائٹ پر حاصل کی جا سکتی ہیں۔

امریکی پبلک اسکول

امریکی قانون غیر ملکی طلبہ کو عوامی ابتدائی اسکول (مونٹیسوری سے لے کر 8 ویں درجہ تک) یا عوامی چندہ سے چل رہے بالغوں کے تعلیمی پرواگرم میں شرکت کرنے کی اجازت نہیں دیتا ہے۔ چنانچہ F-1 ویزے اس طرح کے اسکولوں میں پڑھائی کرنے کے لئے جاری نہیں کئے جا سکتے ہيں۔

ایک F-1 ویزا پبلک سکنڈری اسکول (درجہ 9 سے 12 تک) میں حاضری کے لئے جاری کیا جاتا ہے، لیکن طالب علم کے اس اسکول میں رہنے کی زیادہ سے زیادہ مدت 12 مہینے تک محدود ہے۔ اسکول کے لئے یہ بھی لازمی ہے کہ وہ فارم I-20 پر اس جانب اشارہ کرے کہ طالب علم نے تعلیم کا غیر رعایتی خرچہ ادا کر دیا ہے نیز اس مقصد کے لئے طالب علم کے ذریعہ جمع کی گئی رقم کی جانب بھی اشارہ کرے۔

F-1 کی قانونی ضروریات کے تعلق سے مزید معلومات کے لئے، محکمۂ خارجہ کی ویب سائٹ دیکھیں۔

وہ لوگ جن کے پاس، A، E، F-2، G، H-4، J-2، L-2، M-2 یا دیگر مشتق نان امیگرنٹ ویزے ہیں، وہ عوامی ابتدائی اور سکنڈری اسکولوں میں اندراج کرا سکتے ہیں۔

طالب علم کی رہنمائی، امریکی اسکول کا پتہ لگانا

وہ طلبہ جو کسی امریکی تعلیمی ادارے میں اندراج کرانے کی امید رکھتے ہیں ان کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے کہ وہ https://travel.state.gov/content/travel/en/us-visas/visa-information-resources/all-visa-categories.html اور www.usefpakistan.org کا مطالعہ کریں اور ان سے رابطہ قائم کریں.

درخواست سے متعلق اشیاء

F یا M ویزا کے لئے درخواست دینے کے لئے، آپ کو درج ذیل چیزیں جمع کرنا لازمی ہے:

  • نان امیگرنٹ ویزا الیکٹرانک درخواست (DS-160) فارم۔ DS-160 کے تعلق سے مزید جانکاری حاصل کرنے کے لئے DS-160 ویب صفحہ دیکھیں۔
  • ایک پاسپورٹ جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ کا سفر کرنے کے لئے درست ہو جس کی درستگی کی تاریخ ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں قیام کی آپ کی مقصودہ مدت کے بعد کم از کم چھ مہینے ہو (جب تک کہ ملک کے مخصوص معاہدے استثناءات فراہم نہ کریں)۔ اگر آپ کے پاسپورٹ میں ایک سے زیادہ شخص شامل ہے، تو ہر اس شخص کو جو ویزا حاصل کرنا چاہتا ہو، درخواست جمع کرنا لازمی ہے۔
  • ایک 2"x2" (5cmx5cm) فوٹوگراف جو گزشتہ چھ ماہ کے اندر لیا گیا ہو۔ فوٹو کی شکل کے تعلق سے اس ویب صفحہ میں مزید معلومات ہیں۔
  • ایک رسید جس میں مقامی کرنسی میں ادا کی گئی 160 امریکی ڈالر کی ناقابل واپسی نان امیگرنٹ ویزا درخواست کارروائی فیس کا ذکر ہو۔ اس فیس کی ادائیگی کے تعلق سے اس ویب صفحہ میں مزید معلوما ت ہیں۔ اگر ایک ویزا جاری کیا جاتا ہے، تو ویزا جاری کرنے کی ایک اضافی مبادلہ فیس بھی ہو سکتی ہے جس کا انحصار آپ کی قومیت پر ہے۔ محکمۂ خارجہ کی ویب سائٹ اس بات کا پتہ لگانے میں آپ کی مدد کر سکتی ہے کہ آیا آپ کو ویزا جاری کرنے کی مبادلہ فیس ادا کرنا لازمی ہے اور فیس کی رقم کیا ہے۔
  • اپنے امریکی اسکول یا پروگرام کی جانب سے ایک منظور شدہ فارم I-20۔

ان اشیاء کے علاوہ، آپ کے لئے انٹرویو اپوائنٹمنٹ خط پیش کرنا لازمی ہے جو اس بات کی توثیق کرے کہ آپ نے اس سروس کے ذریعہ ایک اپوائنٹمنٹ محفوظ کی ہے۔ آپ ان تائیدی دستاویزات کو بھی لا سکتے ہیں جو آپ کے خیال میں قونصلر افسر کو دی گئی معلومات میں تعاون کر سکتے ہیں۔

درخواست کیسے دیں

مرحلہ 1

نان امیگرنٹ ویزا الیکٹرانک درخواست (DS-160) فارم کو مکمل کریں۔

مرحلہ 2

ویزا درخواست فیس کی ادائیگی کریں۔

مرحلہ 3

اس ویب صفحہ پر اپنی اپوائنٹمنٹ مقرر کریں۔ اپنی اپوائنٹمنٹ مقرر کرنے کے لئے آپ کو درج ذیل چیزوں کی ضرورت ہوگی:

  • آپ کا پاسپورٹ نمبر
  • آپ کی ویزا فیس رسید کا رسید نمبر۔ (اگر آپ کو اس نمبر کا پتہ لگانے میں مدد کی ضرورت ہے تو یہاں کلک کریں۔)
  • آپ کے DS-160 توثیقی صفحہ میں مذکور دس (10) عددی بارکوڈ نمبر
مرحلہ 4

اپنے ویزا انٹریو کی تاریخ اور وقت پر امریکی سفارت خانہ یا قونصل خانہ کا دورہ کریں۔ آپ کے لئے اپنے اپوائنٹمنٹ خظ کی پرنٹ کی ہوئی نقل، اپنا DS-160 توثیقی صفحہ، گزشتہ چھ مہینوں کے اندر لیا گیا فوٹوگراف، اپنا موجودہ اور پرانا پاسپورٹ، اور ویزا فیس ادائیگی کی اصل رسید لانا ضروری ہے۔ ان تمام چیزوں کے بغیر درخواستیں قابل قبول نہیں ہوں گی۔

معاون دستاویزات

معاون دستاویزات ہی بہت سارے عناصر میں سے ایک ایسا عنصر ہے جس کو قونصلر افسر آپ کے انٹرویو میں ملاحظہ کرے گا۔ قونصلر افسران فردا “فردا” ہر درخواست پر نظر ڈالتے ہیں اور فیصلہ کے دوران پیشہ ورانہ، سماجی، ثقافتی اور دوسرے عوامل کو ملاحظہ کرتے ہیں۔ قونصل افسران آپ کے مخصوص ارادوں، کنبہ کی حالت، اور آپ کے رہائشی ملک کے اندر آپ کے لمبے منصوبے اور امکانات پر نظر ڈال سکتے ہیں۔ ہر معاملہ کی جانچ فردا” فردا” کی جاتی ہے اور ہر اعتبار قانون کے تحت کیا جاتا ہے۔

احتیاط: غلط دستاویزات پیش نہ کریںدھوکہ دہی یا غلط بیانی کی وجہ سے ویزا کے لئے دائمی طور پر نااہل قرار دیا جاسکتا ہے۔ اگر رازداری کی وجہ سے تشویش ہے، تو آپ کو یاد رہے کہ یوایس سفارت خانہ یا قونصل خانہ آپ کی حقیقی معلومات کسی کو فراہم نہیں کراتا اور آپ کی معلومات کی رازداری کا احترام کرتا ہے۔

آپ کو اپنے انٹرویو میں درج ذیل دستاویزات لانے چاہئیں:

  • ایسے دستاویزات جو آپ کے گھریلو ملک کے ساتھ مالی، سماجی اور کنبہ کے تعلقات ظاہر کرتے ہوں، اور جو کہ ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں آپ کی پڑھائی کے پروگرام ختم ہو جانے کے بعد آپ کو اپنے ملک واپس جانے پر مجبور کریں گے۔
  • مالی اور کوئی دوسرے دستاویزات جن کے بارے میں آپ کا خیال ہے کہ وہ آپ کی درخواست میں مدد کریں گے اور جو کہ اس بات کا قابل اعتماد ثبوت دیں گے کہ پڑھائی کے پہلے سال کے تمام اخراجات کو پورا کرنے کے لئے آپ کے پاس پہلے سے دستیاب کافی فنڈ ہیں، اور یہ کہ آپ کو اتنے فنڈ تک رسائی حاصل ہے جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں آپ کے رہنے کے دوران تمام اخراجات کو پورا کرنے کے لئے کافی ہیں۔ M-1 درخواست دہندگان کے لئے لازم ہے کہ وہ اپنے مقصودہ قیام کی پوری مدت کے تمام ٹیوشن اور معاشی اخراجات کی ادائیگی کرنے کی صلاحیت کا مظاہرہ کریں۔
  • بینک کے بیانات کی نقلیں جو کہ اس وقت تک قبول نہ کی جائیں گی جب تک کہ آپ بینک کے بیانات کی اصل نقلیں یا بینک کی اصل کتابچے نہ دکھا سکیں۔
  • اگر مالی اعتبار سے آپ کی کفالت کوئی دوسرا شخص کرتا ہے، تو کفیل کے ساتھ اپنا رشتہ کا ثبوت پیش کریں (جیسے اپنا برتھ سرٹیفکٹ)، نیز کفیل کی سب سے زیادہ حالیہ اصل ٹیکس فارم اور کفیل کے بینک کتابچے اور/ یافکسڈ ڈپوزٹ سرٹیفکٹ بھی لائيں۔
  • اکیڈمی دستاویزات جو کہ علمی تیاری کا پتہ دیتے ہوں۔ فائدہ مند دستاویزات میں گریڈ کے ساتھ اسکول ٹرانسکرپٹ (اصل نقلوں کو ترجیح دیا جائے گا)، عوامی امتحان سرٹیفکٹ (A سطح، وغیرہ) معیاری ٹیسٹ اسکور (SAT, TOEFL، وغیرہ) اور ڈپلومہ۔

منحصرین

وہ شریک حیات اور/ یا 21 سال سے کم عمر کے غیر شادی شدہ بچے جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں اس کے قیام کی مدت تک اصل ویزا کے مالک شخص کے ساتھ رہنا یا ان کے ساتھ شریک ہونا چاہتے ہيں، ان کے لئے مشتق F یا M ویزے درکار ہیں۔ F یا M ویزے والوں کے والدین کے لئے کوئی بھی مشتق ویزا نہیں ہے۔

فیملی ممبران جن کا ارادہ اصل ویزا کے مالک شخص کے ساتھ ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں رہائش اختیار کرنے کا نہیں ہے، لیکن صرف چھٹیوں میں دورہ کرنے کی خواہش رکھتے ہوں، زائر (B-2) ویزے کے لئے درخواست دینے کے اہل ہو سکتے ہیں۔

شریک حیات یا بچے یا M ویزا پر ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں کام نہیں کر سکتے ہیں۔ اگر آپ کے شریک حیات/ بچہ کو ملازمت کی تلاش ہے، تو شریک حیات کے لئے مناسب کام ویزا حاصل کرنا لازمی ہے۔

منحصرین کے لئے تائیدی دستاویزات

وہ درخواست دہندگان جن کے ساتھ منحصرین ہیں، کو درج ذیل چیزیں بھی فراہم کرنا ضروری ہیں:

  • طالب علم کے رشتہ کا ثبوت اس کے یا اس کی شریک حیات اور/ یا بچہ کے ساتھ (یعنی شادی اور برتھ سرٹیفکٹ)
  • یہ بات قابل ترجیح ہے کہ کنبے ایک ہی وقت میں اپنے ویزے کے لئے درخواست دیں، لیکن اگر شریک حیات اور/ یا بچہ کے لئے بعد میں الگ طور سے درخواست دینا ضروری ہے، تو انہیں چاہئے کہ وہ سٹوڈنٹ ویزا کے مالک شخص کے پاسپورٹ اور ویزا کی ایک نقل لائیں، اور ساتھ ہی ساتھ دوسرے تمام ضروری دستاویزات بھی۔

دیگر معلومات

اختیاری عملی تربیت (OPT)

F-1 ویزا کے مالک افراد گریجویشن کے لئے کورس کی تمام ضروریات مکمل کرنے کے بعد (اس میں مقالہ یا اس کے مساوی کوئی چیز شامل نہیں ہے) یا تمام ضروریات مکمل کرنے کے بعد 12 مہینے تک کے اختیاری عملی تربیت کے لئے اہل ہو سکتے ہيں۔ او پی ٹی طالب علم کے اکیڈمی کام سے الگ ہے، اور او پی ٹی کا وقت عام طور سے طالب علم کے اکیڈمی پروگرام یا مکمل شدہ پڑھائی کی تاریخ میں نہیں ظاہر نہیں کیا جائے گا۔ وہ طلبہ جو او پی ٹی کرنے کے لئے F ویزا کی درخواست دے رہے ہوں، وہ پڑھائی کے ختم ہونے کی اصل تاریخ جو گزر چکی ہوگی، کے ساتھ ایک I-20 پیش کر سکتے ہيں۔ تاہم، یہ I-20 کا اسکول کے نامزد اہلکار کے ذریعہ تحریر کیا ہونا ضروری ہے تاکہ وہ ایک او پی ٹی پروگرام کی منظوری کی عکاسی کرے جو پڑھائی کی مستقل مدت کے ختم ہونے کے بعد تک بڑھ جاتا ہے۔ اس کے علاوہ، طالب علم کے پاس اس بات کا ثبوت ہونا لازمی ہے کہ USCIS نے ان کے عملی تربیتی پروگرام کو منظور کر لیا ہے یا یہ کہ درخواست زیر التوا ہے، خواہ ایک منظور شدہ ملازمت اجازت کارڈ کی شکل میں یا ایک فارم I-797 کی شکل میں ہو جس میں اس جانب اشارہ ہو کہ اس طالب علم کے پاس او پی ٹی پروگرام کے لئے ایک زیر التوا درخواست ہے۔

پڑھائی میں وقفہ کے بعد سٹوڈنٹ ویزے کی درستگی

وہ طلبہ جو پانچ مہینوں سے زیادہ تک کلاسوں سے دور ہیں، بیرون ملک کے سفر کے بعد اسکول واپس آنے کے لئے وہ نئے F-1 یا M-1 سٹوڈنٹ ویزا کے لئے درخواست دینے اور اسے حاصل کرنے کی توقع کر سکتے ہیں، جیسا کہ ذیل میں اس کی وضاحت کی گئی ہے۔

وہ طلبہ جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ کے اندر ہوں

ایک طالب علم (F-1 یا M-1) اس اسٹیٹس کو کھو سکتا ہے اگر وہ امگریشن قانون کے تحت، اسکولوں یا پروگراموں کو منتقل کرنے کی تاریخ کے پانچ مہینے کے اندر پڑھائی دوبارہ شروع نہیں کرتے ہيں۔ اگر طالب علم اسٹیٹس کھو دیتا ہے، تو جب تک USCIS طالب علم کے اسٹیٹس کو بحال نہ کردے، تب تک طالب علم کا F یا M ویزا مستقبل میں ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی طرف لوٹنے کی غرض سے سفر کرنے کے لئے بھی غیر درست ہوگا۔ اسٹیٹس کو بحال کرنے کی درخواست کرنے کے تعلق سے مزید معلومات کے لئے USCIS کی ویب سائٹ، اور نان امیگرنٹ اسٹیٹس فارم I-539 کو بڑھانے/ تبدیل کرنے کی ہدایات دیکھیں۔

وہ طلبہ جو بیرون ملک کے سفر سے ریاست ہائے متحدہ امریکہ لوٹ رہے ہوں

وہ طلبہ جو پانچ مہینے یا اس سے زیادہ کا پڑھائی میں وقفہ کرنے کے لئے ریاست ہائے متحدہ امریکہ سے روانہ ہوتے ہیں، وہ اپنے F-1 یا M-1 ویزا اسٹیٹس کو کھو سکتے ہیں الا یہ کہ بیرون ملک کی ان کی سرگرمیاں ان کی پڑھائی کے کورس سے متعلق ہوں۔ سفر کرنے سے پہلے، طلبہ کے پاس اگر اس تعلق سے سوال ہو کہ کیا ان کی سرگرمی ان کی پڑھائی کے کورس سے تعلق رکھتی ہے تو وہ اپنے اسکول کے نامزد اہلکار سے اس کو چیک کرنے کی خواہش کر سکتے ہيں۔

جب کسٹمز اور بارڈر پروٹیکشن (CBP) کے امگریشن انسپکٹر کے سامنے داخلہ کی بندرگاہ پر ماضی میں استعمال کیا گیا، F-1 یا M-1 جس کی میعاد ختم نہ ہوئی ہو، واپس لوٹ رہے ایسے طالب علم کی جانب سے پیش کیا جائے جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ سے باہر اور طالب علم کے اسٹیٹس سے پانچ مہینے سے زیادہ تک باہر رہا ہے، تو CBP کا امیگریشن انسپکٹر اس طالب علم کو ایک درست نان امیگرنٹ ویزا کا مالک ہونے کے لئے ناقابل قبول پا سکتاہے۔ CBP داخلہ کی درخواست کو واپس لینے کے طالب کو اجازت دینے کے بعد ویزا کو منسوخ بھی کر سکتا ہے۔اس لئے، طلبہ کے لئے ہوشیاری کی بات یہ ہے کہ وہ پانچ مہینے سے زیادہ کی غیر حاضری جو ان کی پڑھائی کے کورس سے متعلق نہیں ہے، کے بعد اپنی پڑھائی کی طرف واپس آنے کے لئے ریاست ہائے متحدہ امریکہ کا سفر کرنے سے پہلے بیرون ملک واقع امریکی سفارت خانہ یا قونصل خانہ میں نئے ویزے کے لئے درخواست دیں۔